Breaking News

Types of Kitchen Utensils with their Advantages and Disadvantages


صحت اور کھانے کے برتن

آجکل لوگ کسی بھی برتن میں کھانا کھانے لگ جاتے ہیں یہ سوچے بغیر کہ اس طرح کے برتن میں کھانا کھانا انکی صحت کے لئے فائدہ مندہ بھی ھے یا کہ نقصان دہ۔ اس لئے ہمیں کھانے کے برتنوں کے بارے میں ضرور جاننا چاہیے تا کہ ہم صحت مند رہ سکیں ۔آج آپ کو کچھ ایسے برتنوں کے بارے میں بتائیں گے جن میں کھانا کھانا صحت کے لئے اچھا ہوتا ہے۔
crockery

پلاسٹک اور میلامائن کے برتن:


آج کل پلاسٹک یا پھر میلامائن سے بنے رنگ برنگے اور دیدہ زیب برتن نہایت مناسب قیمت میں دستیاب ہوتے ہیں۔ لیکن ان کی وجہ سے پیدا ہونے والے صحت کے مسائل بے شمار ہیں۔ ان سے حتیٰ الوسع بچنے کی ضرورت ہے۔ان میں گرم کھانا ڈالنے سے، ان کو کھرچنے سے یا پھر زیادہ استعمال کی وجہ سے یہ گھس کر کھانے میں شامل ہو جاتے ہیں۔ اور بہت سی بیماریوں کا باعث بنتے ہیں۔

مٹی کے برتن :

clay-pots

مٹی سے بنے ہوئے برتنو ں میں کھانا کھانا صحت کے لیے نہایت فائدہ مند ھے . اس میں آئل کا استعمال بھی کم ہوتا ہے اور اس کے ساتھ کھانے کا مزہ بھی بہتر ہوتا ہے۔ اور یہ سستے داموں آسانی سے مل بھی جاتے ہیں جس سے گھر کے بجٹ پر بھی زیادہ اثر نہیں پڑتا .روزمرہ کا کھانا مٹی کے برتنوں میں کھائیں اور کچھ مہینوں بعد تبدیل کر کے دوسرے خرید لیں اور پلاسٹک , میلامائین کے برتنوں کو خیر باد کہہ دیں کیونکہ وہ صحت کے لیے انتہائ مضر ہیں .

پیتل کے برتن :

brass-crockery

جسم کی حالت کو درست رکھنے اور اپنی صحت کو اپ ٹو ڈیٹ رکھنے کے پیتل کے برتنوں میں کھانا ضروری ہے ۔ یہ کاپر اور زنک کا بہترین ذخیرہ اپنے اندر سموئے ہوئے ہوتے ہیں اور ایسے ہی پیتل کےبنے ہوئے گلاس میں پانی پینا بھی نہایت مفید ہوتا ھے .برصغیر میں بھارت کا شہر مرادآباد پیتل اور تانبے کے برتن بنانے کی صنعت کے لیے دنیا بھر میں مشہور ھے .

اسٹیل کے برتن :

stainless-steel-crockery

اسٹیل سے بنے ہوئے برتن سے نا تو فائدہ ہوتاہے اور نا ہی نقصان ہوتا ھے کیونکہ پکانے کے دوران یہ کسی بھی قسم کا ریکشن نہیں کرتا اور اپنی حالت پر رہتا ہے .تاہم اس میں کھانا پکانے وقت بہت کم آنچ رکھنی چاھیے اور احتیاط سے کام لینا چاھیے کیونکہ یہ حرارت کو جلدی جذب کرتا ھے تو کھانا جل کر پتیلی کے پیندے میں لگ جاتا ھے .بہتر یہ ھے اسٹیل کےبرتن میں یا پانی ابلا جاۓ یا ابالنے والی چیزوں کے پکانے کے لیے استعمال کیا جاۓ اور اسٹیل کی پلیٹوں اور گلاس وغیرہ کو کھانا کھانے کے لیے استعمال کیا جاۓ .اسٹیل کوئ دھات نہیں ھے بلکہ یہ دھات کی ایک بھرت ھے .

ایلومینیم کے برتن :

aluminum-kitchen-utensils

ایلومینیم کے بنے ہوئے برتنوں کے استعمال سے ڈیمنشیا یعنی یاداشت کی خرابی اور خارش کی بیماری پیدا ہوتی ہے ۔ اور اس کے ساتھ جگر کے لئے نقصان دہ ہوتاہے اور ایلومینیم کے بنے برتن میں کھانا پکانے سے یہ کھانے میں موجود فولاد اور کیلشیم کو بھی ختم کر دیتا ھے۔

سونے کے بنے برتن :

gold-crockery

اس سے ایمیونٹی سسٹم بہتر ہوتا ہے اور دماغ کے خلیوں کے لیے بھی فائدہ مند ھے اور حافظہ بہتر ہوتا ہے اور اس کے ساتھ یہ برتن دمے کےمریضوں کے لئے بہت اچھے رہتے ہیں لیکن ماہرین صحت کے مطابق ان برتنوں میں کبھی کبھار ہی کھانا چاھیے ورنہ صحت کی بہت سی پیچیدگیوں کا سامنا ھو سکتا ھے۔

لوہے سے بنے برتن :

iron-utensils

ایسے برتنوں کے استعمال سے دماغ کے افعال بہتر اور اعضاء ٹھیک سے کام کرتے ہیں ۔ اس کے ساتھ دوسری کئی خرابیوں کو درست کرتا ہے لیکن یاد رکھیے ترش کھانے اور تیزابی خصوصیات کے حامل کھانے اسمیں کبھی بھی نا پکائیں خاص طور سے ٹماٹر .اسکے علاوہ لوہے کے برتن پانی اسٹور کرنے کے لئے بھی کبھی استعما ل نا کریں .

اخبار کا کھانے پینے کی اشیاء رکھنے کے لیے استعمال :

newspaper-wrapped-food

اخبار کا استعمال ایک زہر ہے کیونکہ جب آپ کسی کھانے کی چیز کو اس میں لپٹتے ہیں تو اس میں موجود سیاہی کھانے کی اشیاء میں مل جاتی ہے جو کہ کاربن کی بنی ہوتی ہے اور خطرناک ہوتی ھے اور آپکو مختلف خطرناک بیماریوں میں مبتلا کر سکتی ھے .

نان اسٹیک سے بنے برتن :

non-stick-kitchen-utensils

ایسے برتنوں میں کھانا پکانا بہتر اور سہل تو ہوتا ھے کیونکہ کھانا اسمیں جلتا اور چپکتا نہیں ھے لیکن اس سے صحت کا کباڑا ہو سکتا ہے کیونکہ جب اس میں کھانا پکتا ہے تو کارنوجینک نامی کیمیکل پیدا ہوتا ہے جس سے ٹاکسین پیدا ہوتی ہے جو کہ نقصان دہ ھے اسکے علاوہ جب اسکی کوٹینگ اتر جاۓ تو کبھی بھی اسمیں کھانا نا پکائیں یہ مضر صحت ھوتا ھے .

کاپر یعنی تانبے سے بنے ہوئے برتن :

copper-kitchen-utensils

تانبے کے برتنوں کے استعمال سے بیمار ہونے کے مواقع کم ہوجاتے ہیں .خون صاف ہوتا ہے حافظہ بہتر ہوتا ہے تھائ رائیڈ غدود میں بہتری ہوتی ہے اور جسم سے ٹاکسین یعنی زیر نکال دیتا ھے لیکن ان برتنوں کو ہر تھوڑے عرصے بعد قلعی کراتے رہنا چاھیے ورنہ ان میں پکا کھانا زہرآلود ھو جاتا ھے .دیگ والے بھی اپنی دیگیں بغیر قلعی کراۓ استعمال کرتے رھتے ہیں جس کی وجہ سے اکثر لوگ ایسی دیگوں کا پکا کھانا کھا کر پیٹ کی مختلف بیماریوں کا شکار ھو جاتے ہیں . تانبے کے برتن میں کھٹی , ترش چیزیں کبھی نہیں پکانی چاھیں ایسا کرنا سخت مضر صحت ھوتا ھے .

سلور یعنی چاندی کے بنے برتن :

silver-crockery

سلور سےبنے ہوئے برتنوں مین کھانا اچھا ہے لیکن پکانا ہر گز نہیں اچھا نہیں ھے کیونکہ حرارت سے اس میں سے مختلف گیسوں کا اخراج ھوتا ھے. جبکہ سلور سے بنی پلیٹ یا گلاس , کٹورے میں کھانا کھانے یا پانی پینے سے دماغ کے افعال ٹھیک ھونے کے ساتھ نظر بھی ٹھیک رہتی ھے .

کانسی سے بنے برتن :

bronze-cutlery

کانسی کے بنے برتنوں میں کھانا کھایا جا سکتا ھے اس سے حافظہ بہتر ہوتا ہے لیکن اس میں ترش اور تیزابی کھانے کبھی بھی نہ پکائیں کیونکہ اس کی وجہ سے ان میں کیمیائی تعامل پیدا ہوتا ہے جس کی وجہ سے کھانے میں ٹآکسین آجاتا ہے جو کہ نقصان دہ ہوتا ہے۔

No comments